Home / ہمارا شہر / اسلام آباد / : جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں افغان طالبان کے جھنڈے لانے والے کارکنان کو گرفتار کر لیا گیا ہے

: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں افغان طالبان کے جھنڈے لانے والے کارکنان کو گرفتار کر لیا گیا ہے

اسلام آباد کلک رپورٹر سے
جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں افغان طالبان کے جھنڈے لانے والے کارکنان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔تفصیلات کے مطابق جمعیت علمائے اسلام (ف) کے دھرنے میں طالبان کا پرچم لہرایا گیا تھا جس کے بعد پولیس نے بھی گرفتاریوں کا آغاز کر دیا ہے۔
ے آزادی مارچ میں افغان طالبان کے جھنڈے لانے والے کئی کارکنان کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ ڈپٹی کشمنر اسلام آباد نے گرفتاریوں کی تصدیق کر دی ہے۔جب کہ آزادی مارچ میں انصار الاسلام کے کارکنان کے پاس لاٹھیوں کے بعد تلواروں کی موجودگی کا بھی انکشاف کیا گیا ہے جس نے مزید کئی سوالات کھڑے کر دئیے ہیں۔کارکنان کے پاس تلواروں کی کی موجودگی سے کسی تصادم کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔
جب کہ دوسری جانب دھرنے کی انتظامیہ نے اس معاملے پر اپنا موقف پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ ہمارا ہ طالبان کا پرچم لہرانے والوں کا ہم سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ نجی ٹی وی چینل کے مطابق انجینئیر رزاق نے پرچم لہرانے والوں سے لاتعلقی کا اظہار کیا جس کے کچھ دیر بعد ہی جھنڈے اُتار لیے گئے۔ ذمہ داران نے بتایا کہ طالبان کے پرچم لہرانے میں جے یو آئی کا کوئی کردار نہیں اور نہ کوئی تعلق ہے۔
جلسے میں اعلان بھی کیا گیا کہ کارکنان میڈیا سے بات نہ کریں، میڈیا سے صرف ذمہ داران ہی بات کریں گے۔ جلسے میں لہرائے جانے والے طالبان کے پرچم سے متعلق بات کرتے ہوئے تجزیہ کار جنرل (ر) غلام مصطفیٰ نے کہا کہ پرچم لہرانے کا مقصد حکومت کو دھمکی دینا ہے کہ ہمارے ساتھ طالبان موجود ہیں۔ ایسے جھنڈے حکومت کو واضح پیغام ہے کہ طالبان بھی آزادی مارچ میں موجود ہیں۔ آزادی مارچ کیخلاف کوئی بھی قدم اٹھانے سے پہلے حکومت کو سو بار سوچنا چاہیے۔

About admin

Check Also

مولانا فضل الرحمن اور انے کے ساتھیوں کے لیے زمین تنگ کردیں گیں فواد چوہدری کا بڑا بیان

اسلام آباد۔۔کلک سٹاف رپورٹر سے ۔۔۔ جمیعت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان …

Leave a Reply

کلک نیوز سے واٹس ایپ پر رابطہ کریں