Breaking News
Home / اہم خبریں / سوڈان میں فوج اور حزب اختلاف کے درمیان اختیارات کی تقسیم کا معاہدہ

سوڈان میں فوج اور حزب اختلاف کے درمیان اختیارات کی تقسیم کا معاہدہ

سوڈان میں فوج اور حزب اختلاف کے درمیان اختیارات کی تقسیم کے معاہدے کے آئینی مسودے پر دستخط ہوگئے۔

فرانسیسی میڈیا کے مطابق عبوری فوجی کونسل سوڈان کے نائب سربراہ جنرل محمد ہمدان ڈگلو (ر) اور احمد ربی کے احتجاجی رہنما نے 4 اگست 2019 کو دارالحکومت خرطوم میں ایک تقریب میں آئینی اعلامیہ پر دستخط کیے۔

سوڈان کی فوج کے حکمرانوں اور مظاہرین کی قیادت کرنے والی اپوزیشن نے اتوار کے روز ایک کامیاب مذاکرات کے بعد آئینی اعلامیے پر دستخط کیے جس میں سات مہینوں سے زیادہ سڑکوں پر ہونے والی ریلیوں کے بعدسویلین حکمرانی میں تبدیلی کی راہ ہموار ہوگئی۔

یہ معاہدہ خرطوم میں ہوئی ایک تقریب کے دوان کیا گیا ہے، جس میں 17جولائی کو اقتدارکی تقسیم کا ایک اہم معاہدہ ہوا ہے اور اس میں تین سال کی عبوری مدت کے لئے حکومت کرنے کے لئے ایک عبوری سویلین حکومت اور پارلیمنٹ کی تشکیل کی نگرانی کے لئے مشترکہ سویلین ملٹری حکمران ادارے کو فراہم کی گئی ہے۔

افریقی یونین اور ایتھوپیا کے ثالثین کے ذریعے احتجاجی تحریک کے رہنما احمد ربیع اور حکمران فوجی کونسل کے نائب سربراہ، جنرل محمد ہمدان ڈگلو نے، اعلامیہ پر دستخط کیے۔

نامہ نگاروں نے کہا ’’ڈگلو‘‘ نے اس موقع پر مختصر تقریر کی،جس کے بعد ہزاروں سوڈانی دارالحکومت کی سڑکوں پر جشن منا رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ اگلے روز جرنیلوں اور احتجاجی رہنماؤں سے توقع کی جارہی ہے کہ وہ نئی عبوری سویلین اکثریتی حکمران کونسل کی تشکیل کا اعلان کریں۔

ذرائع کے مطابق “حکمران خودمختار کونسل کے ممبروں کا اعلان 18 اگست کو کیا جائے گا۔

About clicknewslive

Check Also

مقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس شروع

مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرنے پر پاکستان کی جانب سے حکمتِ عملی پر …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

کلک نیوز سے واٹس ایپ پر رابطہ کریں