Home / اہم خبریں / مصنوعی ذہانت رکھنے میں مقبولیت پانے والی روبوٹ رپورٹر صوفیہ نے صحافی بننے کے بعد اگلے مرحلے میں ناول لکھنے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ جرمنی کے شہر بون میں ڈوئیچے ویلے کے تحت گلوبل میڈیا فورم میں بطور مندوب شریک ہونے والی روبوٹ رپورٹر ’صوفیہ‘ اب رپورٹنگ سے آگے کی منصوبہ بندی کرتی نظر آئی ہے، صوفیہ فورم کے دوسرے دن بھی مندوبین کی توجہ کا مرکز بنی رہیں۔ صوفیہ نے ایک لائیو ٹی وی شو میں شرکت کی اور اینکر کے سوالات کے جواب دیئے، شو میں اینکر کے ایک سوال کے جواب میں صوفیہ نے مستقبل میں انگریزی ناول لکھنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔ روبوٹ رپورٹر صوفیہ اب ناول لکھے گی اس کا کہنا ہے کہ معروف امریکی ناول نگار ’فلپ کے ڈک‘ انہیں سب سے زیادہ پسند ہیں اور اس نے جب کبھی ناول لکھا تو ’سائنس فکشن‘ ناول لکھے گی۔ صوفیہ کی پاکستانی میڈیا میں کس طرح پذیرائی ہوگی اور وہ پاکستانی سیاست کی چالبازیوں سے کس طرح نبرد آزما ہوتی ہے یہ اس کی پاکستان آمد کے بعد ہی پتہ چل سکے گا۔ دنیا کی جدیدیت میں کسی روبوٹ سے یہ توقع تو کی جاتی رہی ہے کہ وہ انسانی احکامات پر عمل درآمد کرکے نظام زندگی آسان کردے گا لیکن اب روبوٹ یا مصنوعی ذہانت اتنی ترقی کرچکی ہے کہ وہ انسان کا کام بھی خود سنبھالنے کی تیاری کر رہی ہے۔

مصنوعی ذہانت رکھنے میں مقبولیت پانے والی روبوٹ رپورٹر صوفیہ نے صحافی بننے کے بعد اگلے مرحلے میں ناول لکھنے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ جرمنی کے شہر بون میں ڈوئیچے ویلے کے تحت گلوبل میڈیا فورم میں بطور مندوب شریک ہونے والی روبوٹ رپورٹر ’صوفیہ‘ اب رپورٹنگ سے آگے کی منصوبہ بندی کرتی نظر آئی ہے، صوفیہ فورم کے دوسرے دن بھی مندوبین کی توجہ کا مرکز بنی رہیں۔ صوفیہ نے ایک لائیو ٹی وی شو میں شرکت کی اور اینکر کے سوالات کے جواب دیئے، شو میں اینکر کے ایک سوال کے جواب میں صوفیہ نے مستقبل میں انگریزی ناول لکھنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔ روبوٹ رپورٹر صوفیہ اب ناول لکھے گی اس کا کہنا ہے کہ معروف امریکی ناول نگار ’فلپ کے ڈک‘ انہیں سب سے زیادہ پسند ہیں اور اس نے جب کبھی ناول لکھا تو ’سائنس فکشن‘ ناول لکھے گی۔ صوفیہ کی پاکستانی میڈیا میں کس طرح پذیرائی ہوگی اور وہ پاکستانی سیاست کی چالبازیوں سے کس طرح نبرد آزما ہوتی ہے یہ اس کی پاکستان آمد کے بعد ہی پتہ چل سکے گا۔ دنیا کی جدیدیت میں کسی روبوٹ سے یہ توقع تو کی جاتی رہی ہے کہ وہ انسانی احکامات پر عمل درآمد کرکے نظام زندگی آسان کردے گا لیکن اب روبوٹ یا مصنوعی ذہانت اتنی ترقی کرچکی ہے کہ وہ انسان کا کام بھی خود سنبھالنے کی تیاری کر رہی ہے۔

مصنوعی ذہانت رکھنے میں مقبولیت پانے والی روبوٹ رپورٹر صوفیہ نے صحافی بننے کے بعد اگلے مرحلے میں ناول لکھنے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

جرمنی کے شہر بون میں ڈوئیچے ویلے کے تحت گلوبل میڈیا فورم میں بطور مندوب شریک ہونے والی روبوٹ رپورٹر ’صوفیہ‘ اب رپورٹنگ سے آگے کی منصوبہ بندی کرتی نظر آئی ہے، صوفیہ فورم کے دوسرے دن بھی مندوبین کی توجہ کا مرکز بنی رہیں۔

صوفیہ نے ایک لائیو ٹی وی شو میں شرکت کی اور اینکر کے سوالات کے جواب دیئے، شو میں اینکر کے ایک سوال کے جواب میں صوفیہ نے مستقبل میں انگریزی ناول لکھنے میں دلچسپی ظاہر کی ہے۔

روبوٹ رپورٹر صوفیہ اب ناول لکھے گی
اس کا کہنا ہے کہ معروف امریکی ناول نگار ’فلپ کے ڈک‘ انہیں سب سے زیادہ پسند ہیں اور اس نے جب کبھی ناول لکھا تو ’سائنس فکشن‘ ناول لکھے گی۔

صوفیہ کی پاکستانی میڈیا میں کس طرح پذیرائی ہوگی اور وہ پاکستانی سیاست کی چالبازیوں سے کس طرح نبرد آزما ہوتی ہے یہ اس کی پاکستان آمد کے بعد ہی پتہ چل سکے گا۔

دنیا کی جدیدیت میں کسی روبوٹ سے یہ توقع تو کی جاتی رہی ہے کہ وہ انسانی احکامات پر عمل درآمد کرکے نظام زندگی آسان کردے گا لیکن اب روبوٹ یا مصنوعی ذہانت اتنی ترقی کرچکی ہے کہ وہ انسان کا کام بھی خود سنبھالنے کی تیاری کر رہی ہے۔

About clicknewslive

Check Also

: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں افغان طالبان کے جھنڈے لانے والے کارکنان کو گرفتار کر لیا گیا ہے

اسلام آباد کلک رپورٹر سے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے …

Leave a Reply

کلک نیوز سے واٹس ایپ پر رابطہ کریں