Home / اہم خبریں / اپوزیشن چیئرمین نیب کو متنازع بنانے کی کوشش کررہی ہے، فردوس عاشق

اپوزیشن چیئرمین نیب کو متنازع بنانے کی کوشش کررہی ہے، فردوس عاشق

کراچی (ٹی وی رپورٹ)جیوکے پروگرام ’’آج شاہزیب خانزادہ کے ساتھ‘‘ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہاہےکہ پاکستان نے خطےمیں تناؤ کی صورتحال پیدا نہیں کی ،خطےمیں مسائل کےحل کیلئےمذاکرات کا راستہ اپنانا ہوگا،مستقبل قریب میں اُمیدہےکہ بھارتی حکومت نیاراستہ تلاش کرے ،پاکستان کاموقف ایک ہی ہے کہ ہم امن اوراستحکام چاہتے ہیں،مودی کوبھارت کی داخلی سیاست اجازت نہیں دیتی کہ وہ وزیراعظم پاکستان کودعوت دیں،پاکستان اور عمران خان کا موقف تسلسل سے ایک ہی رہا ہے ،مودی نے پورا الیکشن پاکستان کے خلاف جذبات کی بنیادپرلڑا۔وزیراعظم کی مشیر برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہاکہ اداروں کومضبوط کرنا ہے،اداروں کی ری اسٹرکچرنگ کی ذمےداری بھی حکومت کی ہے،اسوقت اپوزیشن روزکوئی نہ کوئی وار کرکے چیئرمین نیب کومتنازع بنانے کی کوشش کررہی ہے،یہ تو طے کیا جائے کہ حکومت نے پارلیمنٹ میں کس سے مشاورت کرنی ہے ،اپوزیشن لیڈر ملک میں ہوتےتو وزیراعظم،اپوزیشن لیڈر کی مشاورت ہوپاتی،ہم توچاہتے

ہیں کہ تحقیقات ہوں لیکن اپوزیشن لیڈر ہی موجودنہیں تو مشاورت کس سے ہو۔ن لیگ کے رہنما خواجہ آصف نے کہا ہے کہ مجھے تقریر نہیں کرنے دی گئی ، مراد سعید بلاول بھٹوکو جواب دینا چاہتے تھے،چیئرمین نیب پر ایسے وقت میں الزامات لگائے گئے جب حکومت دباؤ میں آئی ،کمیٹی میں حکومت اور دیگر فریقین کو بھی بلا کر موقف لیا جائے،لگائے گئے الزامات کی تحقیقات کیلئے کمیٹی کا مطالبہ کررہے ہیں، چیئرمین نیب کے معاملے سے متعلق پارلیمانی کمیٹی تحقیقات کرے۔ وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان نے جذبہ خیر سگالی کے طورپر مودی کو الیکشن جیتنے پر مبارکباد دی، اس میں کوئی نامناسب بات نہیں ہے، عمران خان وزیراعظم منتخب ہوئے تھے تو نریندر مودی نے انہیں بذریعہ فون مبارکباد بھی دی تھی اور خط بھی لکھا تھا، مودی نے پورا الیکشن پاکستان کے خلاف جذبات کی بنیاد پر لڑاتھا، یہ امید نہیں کی جاسکتی کہ وہ ایک دم اپنے اس بیانیے سے چھٹکارا پالیں اور اپوزیشن کو خود پر تنقید کی دعوت دیدیں، مودی کو بھارت کی داخلی سیاست اجازت نہیں دیتی کہ وزیراعظم عمران خان کو حلف برداری کی تقریب میں مدعو کیا جائے۔ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ عمران خان حلف برداری کی تقریب میں چلے بھی جاتے تو وہاں کچھ حاصل نہیں ہوتا، پاکستان اور بھارت کشمیر سمیت دیگر مسائل پر بات چیت کریں یہ اصل کامیابی ہوگی، پاکستان اور عمران خان کا موقف یہی رہا ہے کہ ہم امن اور استحکام چاہتے ہیں، نریندر مودی کیلئے فی الفور بات چیت شروع کرنا ممکن دکھائی نہیں دیتا لیکن اس کا مطلب یہ نہیں کہ مستقبل قریب میں وہ کوئی نیا راستہ تلاش نہ کریں، مسائل کے حل کیلئے نیا راستہ تلاش کرنا مودی حکومت کی بھی ضرورت ہے، مقبوضہ کشمیر کی صورتحال جس تیزی سے بگڑ رہی ہے مودی اسے کیسے صحیح کریں گے، بی جے پی کے پاس مقبوضہ کشمیر کے حالات کا کوئی حل نہیں ہے۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ جموں و کشمیر کی سول سوسائٹی کے اتحاد نے نئی رپورٹ شائع کی ہے جس میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں اور ہلادینے والے مظالم کی باتیں کی ہیں، مودی خطے کی ترقی چاہتے ہیں تو پاکستان کے ساتھ مذاکرات کے ذریعہ پرامن طریقہ سے مسائل کا حل تلاش کرنا ہوگا، خطے میں تناؤ کو ختم کرنا پاکستان کے مفاد میں ہے، پاکستان نے خطے میں تناؤ کی صورتحال پیدا نہیں کی تھی، دنیا متفق ہے کہ پلوامہ واقعہ میں پاکستان کا کوئی کردار نہیں تھا، مودی پلوامہ حملے میں پاکستان کے ملوث ہونے کا الزام ثابت نہیں کرسکے ہیں۔ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ ایرانی وزیرخارجہ سے ملاقات میں ایران کا موقف سنا اور پاکستان کی تشویش کا اظہار کیا، امریکا ایران تنازع کا سفارتکاری کے ذریعہ سفارتکاری حل تلاش کیا جائے اور پرامن طریقے سے معاملات کو سلجھایا جائے۔ن لیگ کے رہنما خواجہ آصف نے کہا کہ چیئرمین نیب کے معاملہ سے متعلق پارلیمان کی خصوصی کمیٹی تحقیقات کرے، جو الزامات لگائے گئے ان کی تحقیقات کیلئے کمیٹی کا مطالبہ کررہے ہیں کہ نیب کے آفس اور اختیارات کا غلط استعمال تو نہیں ہوا ہے، چیئرمین نیب پر ایسے وقت میں الزامات لگائے گئے جب حکومت دباؤ میں آئی ہوئی ہے، حکومت اگر بلیک میل کررہی ہے تو اس کے مقاصد کی بھی تحقیقات کی جائے،ایک چینل کے لوگوں کو بلا کر پوچھا جائے انہوں نے یہ خبر کیوں دی، پارلیمانی کمیٹی میں حکومت اور دیگر فریقین کو بھی بلا کر موقف لیا جائے۔ خواجہ آصف کا کہنا تھا کہ حکومت نیب قانون سے اختیارات کے استعمال میں بے ضابطگیوں سے متعلق شقیں ہٹانا چاہتی ہے،حکومت کی یقین دہانی کے باوجود وزیرقانون اور وزیردفاع نے میری تقریر کا جواب نہیں دیا اور قرعہ مراد سعید کے نا م نکلا، پچھلے اجلاس میں بھی ہنگامہ اسی وجہ سے ہوا کہ بلاول کی تقریر کا جواب مراد سعید دینا چاہتے تھے۔ خواجہ آصف نے کہا کہ شمالی وزیرستان کا واقعہ پچھلے کچھ واقعات کا تسلسل ہے، شمالی وزیرستان کو خیبرپختونخوا میں ضم کردیا گیا ہے وہاں امن وا مان برقرار رکھنے کی ذمہ داری صوبائی حکومت کی ہے، وہاں لوگوں کی کچھ شکایات ہیں تو صوبائی حکومت انہیں دور کرے، پاک فوج اور سیکیورٹی فورسز نے اس علاقے میں امن قائم کرنے کیلئے بہادری سے جنگ لڑی ہے، اس مسئلہ کو صوبائی حکومت اور سیاستدانوں کو ڈیل کرنا ہے اس میں سیکیورٹی فورسز کو ایکسپوژ کرنا زیادتی ہے،وزیراعظم ،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا اور وزیرداخلہ کا اس معاملہ پر کوئی بیان نہیں آیا، وزیرمواصلات کا اس معاملہ پر وضاحت دینا مذاق ہے۔وزیراعظم کی مشیر برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ چیئرمین نیب سے متعلق معاملات پر اپوزیشن پار لیما نی کمیشن بنانے کا مطالبہ کررہی ہے، حکومت اور اپوزیشن دونوں ہی کا یہاں مفادات سے ٹکراؤ کا معاملہ ہے، حکومت اور اپوزیشن پارلیمانی کمیٹی میں تحقیقات کرتی ہے تو ہماری رائے کا وزن نہیں ہوگا، پارلیمانی کمیٹی اس معاملہ کی تحقیقات کیلئے مناسب فورم نہیں ہے۔ فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہ چیئرمین نیب کو متنازع بنانے سے سب سے زیادہ فائدہ اپوزیشن کو پہنچے گا، اس معاملہ کو منطقی انجام تک پہنچانے کیلئے حکومت اور اپوزیشن کو میکنزم وضع کرنا ہوگا، اپوزیشن لیڈر پاکستان سے لاپتہ ہیں حکومت کس کے ساتھ بیٹھے، چیئرمین نیب سے جڑا کوئی بھی معاملہ لیڈر آف دی ہاؤس اور اپوزیشن لیڈر نے طے کرنا ہے، اپوزیشن لیڈر پاکستان میں دستیاب نہیں تو لیڈر آف دی ہاؤس کیا انگلینڈ جاکر ان سے مشاورت کریں۔ میزبان شاہزیب خانزادہ کے سوال ممکن ہے اس معاملہ میں حکومت اور اپوزیشن ملوث نہ ہوں ، چیئرمین نیب کا اپنا کچھ کیا دھرا ہوا، خاتون جو بات کہہ رہی ہیں اس میں کچھ صداقت ہو، چیئرمین نیب سے مبینہ طورپر کچھ ہوگیا ہو اس کی تحقیقات کیلئے آپ نے کچھ سوچا ہے؟ کے جواب میں فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ چیئرمین نیب کو براہ راست اپنے اوپر کیچڑ اچھالنے کیلئے اس قسم کے ہتھکنڈوں کا سہارا لینے کی ضرورت محسوس نہیں ہونی چاہئے،چیئرمین نیب اس وقت اپوزیشن کے ٹارگٹ میں ہیں، اپوزیشن روز کوئی نہ کوئی وار کر کے انہیں متنازع بنانے کی کوشش کررہی ہے۔

About clicknewslive

Check Also

: جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے آزادی مارچ میں افغان طالبان کے جھنڈے لانے والے کارکنان کو گرفتار کر لیا گیا ہے

اسلام آباد کلک رپورٹر سے جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کے …

Leave a Reply

کلک نیوز سے واٹس ایپ پر رابطہ کریں